ايثار، ايمان اور شجاعت، دشمنوں كے مقابلے ميں مضبوط سپر ہے

تاریخ اشاعت:20/10/1396
شہيدوں كے اہل خانہ سے رہبر انقلاب اسلامي كي ہفتہ وار ملاقات
متعدد شہيدوں كے اہل خانہ نے منگل كو رہبرانقلاب سے ملاقات كي۔ اس ملاقات ميں رہبرانقلاب اسلامي آيت اللہ العظمي سيد علي خامنہ اي نے ايران كے اسلامي نظام كو نقصان پہنچانے كے لئے دشمنوں كي كوششوں اور حاليہ ہنگاموں كي طرف اشارہ كرتے ہوئے فرمايا كہ جس چيز نے دشمنوں كو اپني عداوتوں كو عملي جامہ پہنانے سے روك ركھا ہے، وہ ايراني عوام ميں پايا جانے والا جذبہ ايثار و جاں نثاري، ايمان اور شجاعت ہے۔
رہبر انقلاب اسلامي نے فرمايا كہ ايراني عوام كي عزت و سلامتي اور ترقي و پيشرفت شہدا كے جذبہ ايثار اور قربانيوں كي مرہون منت ہے-
آيت اللہ العظمي سيد علي خامنہ اي نے اس حقيقت كي جانب اشارہ كرتے ہوئے كہ دشمن ہميشہ موقع كي تلاش اور ايراني عوام پر ضرب لگانے كي كوشش ميں رہتا ہے، فرمايا كہ پچھلے چند روز كے دوران رونما ہونے والے واقعات ميں ايران كے دشمن، اسلامي نظام كي راہ ميں مشكلات كھڑي كرنے كے لئے اپنے تمام تر وسائل منجملہ پيسوں، ہتھيار، سياست اور سيكورٹي اور خفيہ ايجنسيوں كے ساتھ متحد ہو گئے تھے-
رہبر انقلاب اسلامي نے فرمايا كہ حاليہ واقعات كے بارے ميں مناسب وقت پر عوام سے كچھ باتيں كريں گے-
رہبر انقلاب اسلامي نے دشمنوں كے دشمنانہ اقدامات كي روك تھام ميں شجاعت اور ايثار كے جذبے كو اہم قرار ديتے ہوئے شہيدوں كو اس جذبے اور مجاہدت كا كامل نمونہ قرار ديا۔ آپ نے فرمايا كہ ايراني عوام قيامت تك ان عزيز شہيدوں كے احسانمند رہيں گے  جنہوں نے اپنے گھر اور گھروالوں كو الوداع  كہہ كر ان خبيث دشمنوں كے مقابلے ميں، كہ جنھيں مغرب و مشرق اور علاقے كي رجعت پسند حكومتوں كي حمايت حاصل تھي، سينہ سپر ہو گئے-
اس موقع پر قائد انقلاب اسلامي نے مغربي ايشيا اور شمالي افريقہ كے بعض ملكوں كي افسوسناك صورتحال كي جانب اشارہ كرتے ہوئے فرمايا كہ اگر مسلط كردہ جنگ ميں بعثي دشمن كامياب ہوجاتا تو وہ كسي بھي چيز پر رحم نہ كرتے اور ايران كي صورتحال ليبيا اور شام سے بھي بدتر ہوجاتي۔
قائد انقلاب نے آخر ميں شہيدوں كے اہل خانہ كي قدرداني كرتے ہوئے فرمايا كہ شہيدوں كے والديں كي شجاعت اور ايثار بھي ان كے شہيد جوانوں سے كم نہيں اور ملك ان كا احسانمند ہے۔
دن كي تصوير
ويڈيو بينك