سوال اور جواب
صارفین کی تعداد:361

گناہان كبيرہ كا معيار كيا ہے؟

گناہان كبيرہ كي طرف قرآن مجيد ميں چند آيات ميں اشارہ ہوا ہے(1) جن كے بارے ميں مفسرين، فقہا اور محدثين نے طولاني گفتگو كي ہے۔
بعض مفسرين تمام گناہوں كو ”گناہان كبيرہ“ مانتے ہيں، كيونكہ صاحب عظمت خدا ہر گناہ بڑا ہے۔
جبكہ بعض علمانے ”كبيرہ“ اور ”صغيرہ“ كو نسبي امر بتايا ہے، اور ہر گناہ كو دوسرے اہم گناہ كے مقابل صغيرہ قرار ديا ہے اور اس سے چھوٹے گناہ كي نسبت كبيرہ قرار ديا ہے۔
بعض مفسرين نے ان گناہوں كو كبيرہ قرار ديا ہے جن پر قرآن مجيد ميں عذاب الٰہي كا وعدہ كيا گيا ہے۔
نيز بعض حضرات كا يہ كہنا ہے كہ گناہ كبيرہ وہ گناہ ہے جس كے ارتكاب كرنے والے پر ”حدّ شرعي “ جاري ہوتي ہے۔ ليكن سب سے بہتر يہ ہے كہ ہم يوں كہيں كہ بعض گناہ كو ”كبيرہ“كہنا خود اس كے عظيم ہونے پر دلالت كرتا ہے، لہٰذا جس گناہ ميں درج ذيل شرائط ميں سے كوئي ايك شرط پائي جائے تو وہ گناہ كبيرہ ہے:
الف۔ جن گناہوں پر عذاب الٰہي كا وعدہ كيا گيا ہے۔
ب۔ جن گناہوں كو قرآن و سنت ميں اہم قرار ديا گيا ہے۔
ج۔ جن گناہوں كو شرعي منابع ميں گناہ كبيرہ سے بھي عظيم قرار ديا گيا ہے۔
د۔ جن گناہوں كے بارے ميں معتبر روايات ميں كبيرہ ہونے كي وضاحت كي گئي ہے۔
اسلامي روايات ميں ”گناہان كبيرہ“ كي تعداد مختلف بيان ہوئي ہے، بعض روايات ميں سات گناہوں كو كبيرہ قرار ديا گيا ہے: (قتل نفس، عقوق والدين، سود خوري، ہجرت كے بعد دار الكفر كي طرف پلٹ جانا، پاكدامن عورتوں پر زنا كي تہمت لگانا، يتيموں كا مال كھانا اور جہاد سے فرار كرنا)(2)
بعض ديگر روايات ميں (بھي) ”گناہان كبيرہ“ كي تعداد سات ہي بيان كي گئي ہے صرف اس فرق كے ساتھ كہ اس ميں عقوق والدين كي جگہ يہ جملہ بيان ہوا ہے كہ ”كُلَّمَا اٴوْجَبَ اللهعلَيہ النَّار“ (جن چيزوں پر خدا نے جہنم كو واجب قرار ديا ہے)
جبكہ بعض دوسري روايات ميں ”گناہان كبيرہ“ كي تعداد ۱۰، بعض ميں ۱۹، اور بعض ميں ان كي تعداد اس سے كہيں زيادہ بتائي گئي ہے۔(3)
گناہان كبيرہ كي تعداد كے سلسلہ ميں اس فرق كي وجہ يہ ہے كہ تمام گناہان كبيرہ برابر نہيں ہيں، بلكہ ان ميں سے بعض كي بہت زيادہ اہميت ہے، يا بالفاظ ديگر ”اكبر الكبائر“ (كبيرہ سے زيادہ بڑا) ہے، لہٰذا ان كے درميان كوئي تضاد اور ٹكراؤ نہيں ہے۔(4)

(1) سورہٴ نساء ، آيت ۳۱ سورہٴ شوريٰ ، آيت ۳۷، اور آيات محل بحث(سورہ نجم ، آيت ۳۱ و ۳۲)
(2) وسائل الشيعہ ، جلد ۱۱، (ابواب جہا د بالنفس، باب ۴۶،حديث۱)
(3) اس سلسلہ ميں مزيد آگاہي كے لئے وسائل الشيعہ (باب ۴۶، از ابواب جہاد بالنفس) پر رجوع فرمائيں، اس باب ميں گناہان كبيرہ كي تعداد كے حوالہ سے ۳۷ حديث نقل ہوئي ہيں
(4) تفسير نمونہ ، جلد ۲۲، صفحہ ۵۴۱
دن كي تصوير
ويڈيو بينك