سوال اور جواب
صارفین کی تعداد:263

خداوندعالم كے ارادہ كي حقيقت كيا ہے؟

اس بات ميں كوئي شك نہيں ہے كہ ارادہ جن معني ميں انسان كے بارے ميں استعمال ہوتا ہے ان معني ميں خداوندعالم كے لئے استعمال نہيں ہوتا ہے۔
كيونكہ انسان پہلے كسي چيز كا تصور كرتا ہے، (مثلاً پاني پينا) پھر اس كے فوائد كے بارے ميں سوچتا ہے، اور اس كے فائدہ كي تصديق كے بعد اس كام كو انجام دينے كا شوق پيدا ہوتا ہے، اور جس وقت انسان كا شوق آخري درجہ پر پہنچ جاتا ہے تو اعضا كے لئے حكم صادر ہوتا ہے اور انسان اس كام كو شروع كرديتا ہے۔(1) 
ليكن ہم جانتے ہيں كہ يہ تمام چيزيں ( تصور، تصديق، شوق، حكم ،نفس اور اعضا كي حركت) خداوندعالم كے سلسلہ ميں بے معني ہيں، كيونكہ يہ تمام چيزيں حادث ہيں ، پس خدا كے ارادہ كا كيا مفہومہے؟۔
اس سلسلہ ميں علم عقائد اور اسلامي علماو فلاسفہ نے ايك ايسا مفہوم بيان كيا ہے كہ ”بسيط“ ہونے كے ساتھ ساتھ خدا ميں كسي بھي طرح كي كوئي تبديلي و تغير نہيں ہوتا۔
ان حضرات كا كہنا ہے كہ خداوند عالم كا ارادہ دوطرح كا ہوتا ہے:
۱۔ ذاتي ارادہ ۔
۲۔ فعلي ارادہ ۔
۱۔ ”ذاتي ارادہ “ كا مطلب يہ ہے كہ وہ دنيا و مافيہا كے بہترين نظام اور نظام خلقت كا علم ركھتا ہے اور احكام شرعي ميں بندوں كے خير و صلاح كا علم ركھتا ہے۔
وہ جانتا ہے كہ اس كائنات كا بہترين نظام كيا ہے، اور كس علاقہ ميں كيا چيز پيدا ہوني چاہئے، يہي ”علم“ مختلف زمانوں ميں موجودات اور حوادث كے پيدا ہونے كا سرچشمہ ہوتا ہے۔
اسي طرح وہ يہ بھي جانتا ہے كہ قوانين و احكام كے لحاظ سے كس چيز ميں بندوں كي مصلحت ہے؟ اور ان قوانين و احكام كي روح اس كا يہي علم ہے جو مصالح و مفاسد كے بارے ميں ہے۔(غور كيجئے)
۲۔ خداوندعالم كا فعلي ارادہ”عين ايجاد“ ہے اور صفات فعل كا جز شمار ہوتا ہے، اس بنا پر زمين و آسمان كي خلقت كے بارے ميں اس كا ارادہ ”عين ايجاد“ ہے، نماز كے واجب ہونے اور جھوٹ كے حرام ہونے پر ارادہ ،عين وجوب و حرام ہے، (يعني اس نے نماز كے واجب كرنے كا ارادہ كيا وہ واجب ہوگئي)
خلاصہ يہ كہ خدا وندعالم كا ذاتي ارادہ اس كا ”عين علم“ اور ”عين ذات“ ہے، اور خدا وندعالم كا فعلي ارادہ اس كام كا ”عين ايجاد“ ہے۔(2) .

(1) بعض فلاسفہ، ارادہ كو وہي ”شوقِ موٴكد “ كا نام ديتے ہيں، جبكہ بعض دوسرے فلاسفہ ”شوق موٴكد “ كے علاوہ نفس كے ايك فعل اور حركت كے بھي قائل ہيں، اور ارادہ كو وہي انساني فعل شمار كرتے ہيں، (غور كيجئے)
(2) تفسير پيام قرآن ، جلد ۴، صفحہ ۱۵۳
دن كي تصوير
تل زينبيہ
ويڈيو بينك